Skip to content

Milk Awareness Campaign Detail

  • Milk

    Milk is a complete food. It helps in strengthening the immune system. After paying due heed to the ingredients of milk, one cannot deny the importance of milk in mental cum physical growth of human being.  It is main source of nutrition for infants in early period of life when they are unable to digest food. But the dilemma with present time is that pure milk is hardly found anywhere. A common term use for impure milk is adulteration.  Adulteration reduce the quality of milk and even make it hazardous. Adulterants like urea, formalin, banaspati, detergents, hydrogen per oxide, hydrogen sulphate, baking powder, caustic soda, whey powder, corn flour, starch, calcium carbonate as well as water may be added to the milk. Most of these adulterants are poisonous and hazardous for human health. As it is an admitted fact that milk is being very easily adulterated throughout the world, following are the main reasons; Demand Supply Gap, Role of Milk Man, Perishable nature of milk, Lack of detection mechanism and Evil economic design of Middle Man are the main reasons for this adulteration. Although economic objectives pave way for this evil practice but the shortage of supply of milk cannot be refuted. Due to its immense importance as a source of nutrition the department has launced an awareness campaign in schools and colleges of all major cities of Punjab. The objectives of this campaign was to inform the people about importance of pure milk in life and the chain by which it reached their homes i.e. from farm to table.

    دودھ

    دودھ ایک مکمل غزا ہے یہ مدافعتی نظام کو مضبوط بنانا  ہے۔ ایک انسان کی زہنی وجسمانی نشونما میں دودھ کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا یہ بچوں کے لئے غزائیت کا اہم ذریعہ ہے موجودہ دور میں خالص دودھ کا حصول ناگزیر ہے۔ ملاوٹ شدہ مادے دودھ کے معیارکو کم کرنےکے ساتھ ساتھ انسانی صحت کے لئے بھی مضر ہیں۔ دودھ میں پانی کے علاوہ یوریا،فارملین،بناسپتی،ڈٹرجنٹس، آکسائیڈز، ہائیڈروجن سلفیٹ، بیکنگ پائوڈر، کاسٹک سوڈا، چھینے پائوڈر، مکئی کا آٹا، نشاستے، کیلشیم کابونیٹ جیسےذہریلےمادوں کی ملاوٹ بھی کی جاتی ہے.                                                                       ۔

    زیادہ تر یہ ملاوٹ شدہ مادے انسانی صحت کے لئے نقصان دہ ہیں پورے ملک میں دودھ کی ملاوٹ ایک تسلیم شدہ حقیقت ہے۔ جن کی بنادی وجوہات درج ذیل ہیں۔

    ۔ رسد اور طلب میں فرق

    ۔ گوالے کا کردار

    ۔ دودھ کی جلد خراب ہونے کی صلاحی

    ۔ ملاوٹ شدہ دودھ کی فوری تشخیص نہ ہونا۔

    ۔ مڈل میں کا منفی اور اقتصادی تسلط

    معاشی مفادات کی وجہ سے دودھ میں ملاوٹ کی جاتی ہے۔ دودھ کا غزائیت سے بھرپور ہونے کی وجہ سے محکمہ نے تمام تمام بڑے شہروں کے سکولوں اور کالجوں میں دودھ کے متعلق ایک آگاہی مہم کا آغاز کیاہے۔ اس مہم کا بنیادی مقاصد روزمرہ زندگی میں خالص دودھ کی افادیت اور دودھ کےفارم سے گھروں تک کی رسائی کےنظام کے بارے میں آگاہ کرنا ہے۔

Milk Awareness Campaign Gallery